چقندر کا پھوک ( Sugar Beet Pulp)

چقندر سے چینی بنانے کے لئے اسمیں سے رس نکالنے کے بعد جو پھوک یا گودا بچ جاتا ھے پوری دنیا میں جانوروں کی بہترین خوراک کے طور پر استعمال کیا جاتا ھے، کیونکہ اسمیں عمومی طور پر دیگر اجزاء کے علاوہ پروٹین 10 فیصد ، کیلشیئم 0.8 فیصد اور فاسفورس 0.5 فیصد پائی جاتی ھے اور انرجی اور فائبر کی دوسرے عام چارہ جات کی نسبت وافر مقدار پائی جاتی ھے

میں پچھلے چار سال سے اپریل اور مئی میں چقندر کا پھوک منگواتا ھوں کیونکہ ان دنوں چارے کی قسم کی تبدیلی کا موسم ھوتا ھے اور سبزچارے کی وافر مقدار دستیاب نہیں ھوتی تو چقندر کے پھوک کو چارے کے بہترین نعم البدل کے طور پر استعمال کرتا ھوں ، اور یہ سبز چارے کی نسبت سستا پڑتا ھےاور جانور بہت شوق سے کھاتے ہیں

چقندر کا پھوک عام طور پر دس کلو فی بالغ جانور ڈالا جاتا ھے لیکن میں پندرہ کلو تک یومیہ استعمال کر رھا ھوں اور اس سے دودھ کی پیداوار میں کافی اضافہ ھوا ھے اجکل بھی میری اوسط پیداوار الحمد للہ 23 لٹر سے زیادہ ھے جو کہ سردیوں میں 26 لٹر تک تھی البتہ فیٹ میں کچھ کمی آئی ھے

پہلے یہ بہت زیادہ نمی کی حالت میں ملتا تھا بلکہ اس سے پانی نکل رھا ھوتا تھا مگر اب شوگر مل سے ھی اسکو قدرے خشک کر کے بھیجا جاتا ھے جسکی وجہ سے اسکی سٹوریج آسان ھو گئی ھے اور اس سے سائیلج بڑے اچھے طریقے سے آسانی سے بن جاتا ھے

یاد رھے اس کی زیادہ مقدار دینے سے جانور کے معدے میں تیزابیت کا مسئلہ پیدا ھو سکتا ھے جس کا بہترین حل پچاس سے سو گرام میٹھا سوڈا فی جانور روزانہ دینے سے تیزابیت کا مسئلہ بھی نہیں ھو گا اور فیٹ میں بھی کوئی خاص کمی نہیں آئے گی

Edited : on 07-05-2018
پچھلے سال کے تجربے کے بعد ثابت ہوا کہ اسکی مقدار سات آٹھ کلو یومیہ فی جانور سے زیادہ استعمال نہ کریں اس سے ابارشن کے خطرات بھی ہوتے ہیں اور جانور repeat بھی کر سکتے ہیں اور معدہ میں تیزابیت بھی زیادہ ہو سکتی ہے

جبکہ 7-8 کلو کا رزلٹ بہترین ہے
03217883931
03000733767

image